> <

صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی۔ استاد نتھو خان

استاد نتھو خان پاکستان کے نامور سارنگی نواز استاد نتھو خان 1924ء میں موضع جنڈیالہ گورو ضلع امرتسر میں پیدا ہوئے۔ ان کے والد میاں مولا بخش بھی اپنے عہد کے معروف سارنگی نواز تھے۔ استاد نتھو خان نے موسیقی کے ابتدائی رموز اپنے والد سے سیکھے اور پھر اپنے چچا فیروز خان‘ استاد احمدی خاں اور استاد ظہوری خان کی شاگردی اختیار کی۔ استاد نتھو خان‘ کلاسیکی گانا بھی جانتے تھے۔ یہی وجہ تھی کہ انہیں اپنے وقت کے کسی بھی بڑے کلاسیکی گلوکار کے ساتھ سنگت میں کبھی دقت نہیں ہوئی۔ روشن آرا بیگم استاد نتھو خان کی سنگت کی زبردست مداح تھیں کیونکہ وہ ایک ہی لمحے میں کئی کئی سر کو چھیڑتے ہوئے نکل جاتی تھیں اور ایسے میں صرف استاد نتھو خان جیسے استاد ہی ان کا ساتھ دے پاتے تھے۔ استاد نتھو خان 7 اپریل 1971ء کو مغربی جرمنی کے شہر میونخ میں انتقال کرگئے۔ انھوں نے صرف 46 برس عمر پائی مگر موسیقی کی دنیا میں اپنے انمٹ نقوش چھوڑ گئے۔ حکومت پاکستان نے ان کی خدمات کے اعتراف میں ان کے انتقال کے 44 سال بعد انھیں 14 اگست 2015ء کو صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی عطا کیا ہے۔  

UP